donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Anwar Jalalpuri
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* زلف کو ابر کا ٹکڑا نہیں لکھا میں نے *

زلف کو ابر کا ٹکڑا نہیں لکھا میں نے 

آج تک کوئی قصیدہ نہیں لکھا میں نے 

جب مخاطب کیا قاتل کو تو قاتل لکھا 

لکھنوی بن کے مسیحا نہیں لکھا میں نے 

میں نے لکھا ہے اسے مریم و سیتا کی طرح 

جسم کو اس کے اجنتا نہیں لکھا میں نے 

کبھی نقاش بتایا کبھی معمار کہا 

دست فنکار کو کاسہ نہیں لکھا میں نے 

تو مرے پاس تھا یا تیری پرانی یادیں 

کوئی اک شعر بھی تنہا نہیں لکھا میں نے 

نیند ٹوٹی کہ یہ ظالم مجھے مل جاتی ہے 

زندگی کو کبھی سپنا نہیں لکھا میں نے 

میرا ہر شعر حقیقت کی ہے زندہ تصویر 

اپنے اشعار میں قصہ نہیں لکھا میں نے 

 

۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸

 

 

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 511