donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* میری دیوانہ صفت آنکھوں کی پروا کر  *
غزل
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
میری دیوانہ صفت آنکھوں کی پروا کرلے
روز دیدار پہ دیدار کا وعدہ کر لے
 
میری نظروں کے تعاقب سے نہیں بچ سکتا
چھپ کے کتنا بھی کہیں پردے پہ پردہ کر لے
 
راستہ کہتا ہے منزل نہیں ملنے والی
پیر کہتے ہیں مشیت پہ بھروسہ کرلے 
 
 اے مرے دل مرے ہاتھوں کو اشارہ کافی
کام دن رات کرینگے تو ارادہ کر لے
 
 خواب! آنکھوں کو پریشان رکھے گا کب تک
یا حقیقت میں بدل یا کہیں پردہ کر لے
 
آج مشکل ہے تو کل کا ہی پتہ کس کو ہے
فکر کر آج کی یا پھر غم_ فردا کر لے 
 
زند گی ہوتی ہے جاوید سکوں کی خاطر
ہر تمنا کو بھلا کر یہ تمنا کر لے
 
****
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 491