donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سوچو تو غیر کوئی جاوید کب زمیں پر *

 

 

غزل
 
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
 
کیا جھیل، جھرنے، سا گر، دریا نہیں جہاں میں
سیراب پھر بھی کوئی دیکھا نہیں جہاں میں
دعوے سنو تو کوئی جھوٹا نہیں جہاں میں 
سچ یہ مگر ہے، کوئی سچا نہیں جہاں میں
پیچھے ہے کیا کسی کے اور دل میں کیا چھپا ہے
جو یہ بتا دے ایسا شیشا نہیں جہاں میں
خود غرضیوں کی کھیتی ہوتی جہاں نہیں  ہو 
خطه کہیں کوئی کیا ایسا نہیں جہاں میں 
ہرسو فساد برپا، ہر سمت بے حیائی 
شیطان تیرے دم سے کیا کیا نہیں جہاں میں
انساں کا کام تھا یہ صحرا کا شکوہ سنتا
خالق نے کیا بہائے دریا نہیں جہاں میں
سوچو تو غیر کوئی جاوید کب زمیں پر  
*********
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 512