donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* انگنت خوابوں نے آنکھوں ہی میں دم ت *
 
غزل
 
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
انگنت خوابوں نے آنکھوں ہی میں دم توڑ دیا
اور اشکوں کا  وہاں سیل_ رواں چھوڑ دیا
 
میری الفت بھری نظروں کے عوض میں اس نے 
پھینک کر سنگ_ حقارت مرا سر پھوڑ دیا 
 
تھوڑی تدبیر سے، محنت سے، کرم سے رب کے 
ہم نے بڑھتے ہوئے طوفان کا رخ موڑ دیا  
 
خامشی نے جو بنا رکھا تھا الفت کا بھرم 
بول کر اس نے وہ  مدت کا بھرم توڑ دیا  
 
منقطع لگتا تھا جو رشتہ اچانک جاوید 
 
اسکے ہونٹوں کے تبسم نے اسے جوڑ دیا
 

 

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 487