donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* تسکین کیسے ہوگی بیتاب الفتوں کی *



 
تسکین کیسے ہوگی بیتاب الفتوں کی
تدبیر کیسے ہوگی مطلوب قربتوں کی

بغض و حسد نہ جانے کیا کیا ستم کرینگے
تشہیر کیوں کریں ہم انکی عنایتوں کی

 محبوب، کیا سبب ہے، یہ ظلم کس لئے ہے
سنتا نہیں شکایت محروم خلوتوں کی

بارش محبتوں کی جاری رہے مسلسل
گر جائے گی یقینا دیوار نفرتوں کی

تیری نظر نے بوسہ جب سے مرا لیا ہے
آندھی سی آ گئی ہے سینے میں حسرتوں کی

اترانا، فخر کرنا، اوروں کو کم سمجھنا
یہ سب علامتیں ہیں انساں میں غربتوں کی
 
اچّھی ہو ہر روایت، بیشک نہیں ضروری
تعظیم لازمی ہے اچّھی روایتوں کی
 
عرفان کیا ہے اسکا عارف کو علم ہوگا
پہچان کب مجھے ہے مجذوب صورتوں کی
 
ہیں منتظر نگاہیں جاوید مدتوں سے
ہو جائے کاش جلوت دو چار ساعتوں کی

۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸

 

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 433