donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* عشق محروم تھا، کاش تو دیکھتا *

غزل


از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
عشق محروم تھا، کاش تو دیکھتا
 کتنا مغموم تھا، کاش تو دیکھتا
 
چشم_نم کا تبسم تری یاد میں
کیسا معصوم تھا کاش تو دیکھتا
 
میرا افسانہء_درد تھا خوب تر
اور منظوم تھا، کاش تو دیکھتا
 
میرے غم سے فقط تو ہی تھا بے خبر
سب کو معلوم تھا، کاش تو دیکھتا
 
آنکھوں سے ہونٹوں تک، چہرے سے پیر تک
درد مرقوم تھا، کاش تو دیکھتا
 
گھر نما قبر میں تیری یادوں تلے
کوئی مرحوم تھا، کاش تو دیکھتا
 
تو تھا لازم اگر باہمی عشق میں
میں بھی ملزوم تھا کاش تو دیکھتا
 
حاکم _شہر! شامل تھا سازش میں تو
امن معدوم تھا، کاش تو دیکھتا
 
جو ملا ہائے جاوید ظالم ملا
میں ہی مظلوم تھا، کاش تو دیکھتا

****************

 

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 537