rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کیا نگاہوں نے کوئی خواب سجایا نہ ک *

غزل


از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
 
کیا نگاہوں نے کوئی خواب سجایا نہ کبھی
کیا کسی کو بھی قریب اپنے بلایا نہ کبھی
 
آتے رہنے کے لئے شکریہ اے یاد کے دوست
میں ہی مجرم ہوں تری یاد میں آیا نہ کبھی
 
اسکی البم میں تو تصویر مری ہے موجود
اس نے تصویر کو سینے سے لگایا نہ کبھی
 
میں تجھے کیسے بتا دیتا دل_ناز کا حال
حال_دل میں نے تو خود کو بھی بتایا نہ کبھی
 
دل چرا کر مرا کہتا ہے مجھے چور یہ اب
خود ہی چوری ہوا، اس نے تو چرایا نہ کبھی
 
قہقہے آوروں کی خوشیوں میں رہے ہیں شامل
 میرے حالات نے خود مجھکو ہنسایا نہ کبھی

میں نے اوروں سے سنا ہے کہ نسیم آتی ہے
کیوں مجھے وقت_سحر اس نے جگایا نہ کبھی
 
تیری جاوید یہ عادت ہے خدا کو بھی پسند
تو نے نظروں سے کسی کو بھی گرایا نہ کبھی


 ۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸

 

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 585