donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* Shab o roz meiN hai sabaat kab *
غزل
ڈاکٹر جاوید جمیل
 
شب وروز میں ہے ثبات کب
ہے مری حیات حیات کب
 
نہ پتہ چلا تری یاد میں
ہوئی صبح کب گئی رات کب
 
بھلا آتا کیا ترے خواب میں
ترا آئنہ مری ذات کب
 
 مرے دوست دیکھیں گے رشک سے
مرے ہاتھ میں ترا ہاتھ کب
 
کوئی بات اور کہاں ہوئی
ہوئی منقطع تری بات کب
 
نہ ادب کوئی نہ لحاظ ہے
نی نسل میں یہ صفات کب
 
نہ ہی مشغلے نہ ہی ولولے
غم_ زندگی سے نجات کب
 
جو نکالتیں نئے زاویے
مری فکر میں وہ جہات کب
 
میں اگا رہا ہوں محبتیں
ملیں دیکھیے ثمرات کب
 
 
Shab o roz meiN hai sabaat kab
Hai meri hayaat hayaat kab
 
Na pata chala teri yaad meiN
Hui subH kab gai raat kab
 
Bhala aata kyat ere KHwaab meiN
Tera aaina meri zaat kab
 
Mere dost dekheNge rashk se
Mere haathoN meiN tera haath kab
 
Koi baat aur kahaN hui
Hui muqata teri baat kab
 
Na adab koi na liHaaz hai
Nai nasl meiN ye sifaat kab
 
Na hi mashGHale na hi walwale
GHam_e zindagi se nijaat kab
 
Jo nikaalteeN nae zaaviye
Meri fikr meiN wo jihaat kab
 
main ugaa raha huN muHabbateiN
mileN dekhye samaraat kab
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 540