donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* اب انتظار میں یہ ہو گیا ہے حال مرا *
غزل
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
 
اب انتظار میں یہ ہو گیا ہے حال مرا
وہ آئے بھی تو لگے گا کہ ہے خیال مرا
 
 تجھے خدا نے بنایا فقط مری خاطر
ترا جمال نہیں ہے، یہ ہے جمال مرا
 
یہی دراصل بنے گا عروج کا ضامن 
سمجھ رہا ہے زمانہ جسے زوال مرا
 
وہ بد دعائیں دلوں میں ہزار دیتے ہیں
جو روز پوچھتے ہیں ہنس کے حال چال مرا 
 
قلم، زبان، قدم تینوں ہی اٹھاتا ہوں
زمانہ کب یہ کہیگا یہ ہے کمال مرا
 
لکھا ہے کاتب_ تقدیر کی اجازت سے
لکھا مگر مرے ہاتھوں نے ہی زوال مرا
 
خوشی کا رقص ہے جاری ہزاروں چہروں پر
خبر یہ پھیل گیی ہو گیا وصال مرا
 
مرے جہاد کی منزل سلامتی کا حصول
لڑا تو ہوگا یہی مقصد_ قتال مرا
 
ہو زخم کتنا بھی گہرا، پلوں میں بھرتا ہے
طبیب صبر ہے جاوید بے مثال مرا
******************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 507