donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کر رہا ہے یہاں خطا کوئی *
غزل
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
کر رہا ہے یہاں خطا کوئی
پا رہا ہے مگر سزا کوئی
 
بکھری اک چاندنی سی چہروں پر
 دیکھو، آتا ہے چاند سا کوئی
 
دل سبھی کے سفر پہ نکلے ہیں
بزم میں ہے غزل سرا کوئی
 
جیسے وہ ہو گئے جدا مجھ سے
یوں کسی سے نہ ہو جدا کوئی
 
  لڑکیوں سا پرایا ہوتا ہے دل
 لے ہی اڑتا ہے دلربا کوئی
 
 کہتا ہے پیار کو حدود میں رکھ
پیار کی بھی ہے انتہا کوئی؟
  
اے خدا تو سمیع ہے تو سن
دے رہا ہے تجھے صدا کوئی
 
اس کی رگ رگ میں شرک ہے پیوست
ڈھونڈھ لایا نیا خدا کوئی
  
جس کو پہنوں تو میں لگوں عالم
ایسی لا دو مجھے قبا کوئی
 
بزم والو! گواہ سب رہنا
دے رہا ہے مجھے دغا کوئی
 
چھیڑخانی ہمیں سے کیوں جاوید
کیا نہیں ملتا دوسرا کوئی ؟
****************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 526