donateplease
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* اٹھنے کو تو اٹھے ہیں ترے آستاں سے ہ *
اٹھنے کو تو اٹھے ہیں ترے آستاں سے ہم
ڈر ہے کہ ہو نہ جائیں کہیں بے نشاں سے ہم

پاتے ہیں اک سکون کی کیفیتِ لطیف
دل میں خیالِ سایۂ زلفِ بتاں سے ہم

جو دل کی بات غیر سے کہتا نہ ہو کبھی
اب تک ملے نہ ایسے کسی رازداں سے ہم

کس نے یہ پھوٹ ڈالی ہمارے دلوں کے بیچ
کچھ بدگماں سے آپ ہیں کچھ بدگماں سے ہم

ناکامیٔ حیات کی ہے داستاں طویل
تم ہی بتائو اِس کو سنائیں کہاں سے ہم

تازہ ہے غم کچھ اِتنا کہ مدت کے بعد بھی
لگتا ہے جیسے آج ہی بچھڑے ہیں ماں سے ہم

اے زندگی تو سانس بھی لینے تو دے ہمیں
گزرے ابھی ہیں عشق میں اک امتحاں سے ہم

ایسا بھی راہ میں ہوا مشتاقؔ بارہا
آگے نکل گئے تھے کبھی کارواں سے ہم
******************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 239