rishta online logo
newsletter
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* وہیں ہر طرف خوں کے چھینٹے پڑے ہیں *
وہیں ہر طرف خوں کے چھینٹے پڑے ہیں
جہاں امن کے گیت گائے گئے ہیں

جلاتے ہیں چن چن کے وہ گھر ہمارا
ہمارے ہی سینے پہ خنجر چلے ہیں

کوئی زندہ رہنے کی تدبیر سوچو
کہ مرنے کے تو سیکڑوں راستے ہیں

ہمیشہ وہ دنیا میں زندہ رہیں گے
جو ہنس ہنس کے لوگوں کے غم بانٹتے ہیں

جہاں کوئی غم کا شرارہ نہیں تھا
سنا ہے کہ لاکھوں وہاں جل مرے ہیں

زمانے کے ہاتھوں پریشاں ہو تم بھی
حصارِ شبِ غم میں ہم بھی گھرے ہیں

بزرگوں سے جو بات تم نے سنی ہے
وہی بات مشتاقؔ بھی کہہ رہے ہیں
**************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 247