rishta online logo
newsletter
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* رات ظلمت کی رِدا جب اوڑھ کر سوجائے  *
رات ظلمت کی رِدا جب اوڑھ کر سوجائے ہے
روشنی بن کر تمہاری یاد مجھ کو آئے ہے

جب ترے شانوں پہ زلفِ خم بہ خم لہرائے ہے
نیلگوں آکاش پر کالی گھٹا چھا جائے ہے

عارضِ گل رنگ تیرا کس سے دیکھا جائے ہے
تیرے ہونٹوں کا تبسم اک قیامت ڈھائے ہے

اے  جمالِ صبح افشاں آ کہ اب تیرے بغیر
زندگی کا قیمتی لمحہ گزرتا جائے ہے

بھولی بسری تیری یادوں کی چمکتی چاندنی
میرے دل کے شعلۂ جذبات کو بھڑکائے ہے

تیرے حسنِ ضو فشاں کی کس سے میں تشبیہ دوں
تیرے حسنِ ضو فشاں سے چاند بھی شرمائے ہے

مجھ کو کردیتی ہے شاداں تیری چشمِ التفات
اک تبسم سے ترے ہر غم غلط ہوجائے ہے

رند کہتے ہیں ترے ہونٹوں کو جامِ ارغواں
تیری چشمِ مے فشاں اک میکدہ کہلائے ہے

جاں گسل مشتاقؔ کتنی ہے یہ شامِ انتظار
وقت گزرا جائے ہے اور دل تڑپتا جائے ہے
*****************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 255