rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* گھر سے جو لے کے ماں کی دعا ہم نکل گئے *
گھر سے جو لے کے ماں کی دعا ہم نکل گئے
رستے میں جو بھی حادثے آئے وہ ٹل گئے

اے میرے دوست کیسے تجھے آگئی ہنسی 
ہنسنا جو میں نے چاہا تو آنسو نکل گئے

ٹھوکر جو تم نے کھائی ، سنبھالا گیا تمہیں
ٹھوکر لگی ہمیں بھی مگر خود سنبھل گئے

حیرت سے کیوں نہ دیکھے ہمیں میرِ کارواں
ہم میرِ کارواں سے بھی آگے نکل گئے

کچھ لوگ تھک کے بیٹھ گئے تیری راہ میں
ہم بھی تھکے ہوئے تھے مگر سر کے بل گئے 

پیدا نہ ہونے پائے تھے دنیا میں جو ابھی
وہ بچے بھی فساد کے شعلوں میں جل گئے

میری فغاں کا اُس پہ نہ کچھ بھی اثر ہوا
حالانکہ میری آہ سے پتھر پگھل گئے

مشتاقؔ مفلسی میں قناعت بھی آگئی
ٹوٹے کھلونوں سے مرے بچے بہل گئے
*******************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 227