rishta online logo
newsletter
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* خوشی ملی بھی مگر درد میں کمی نہ رہی *
خوشی ملی بھی مگر درد میں کمی نہ رہی
ترے بغیر وہ پہلی سی زندگی نہ رہی

نہ جانے کون سا غم دل دُکھا گیا میرا
مرے لبوں پہ خدا جانے کیوں ہنسی نہ رہی

ہوائے تند کچھ ایسی چلی کہ گلشن میں
تھا جس پہ اپنا نشیمن وہ شاخ ہی نہ رہی

کبھی کرم ترا مجھ پر ہوا ہوا نہ ہوا
کبھی نگاہِ عنایت رہی رہی نہ رہی

وہیں لٹی ہے مری دولتِ نظر کہ جہاں
مرے چمن سے بہت دور دلکشی نہ رہی

رموزِ زیست کھلیں کیا کہ اپنی قسمت میں
ازل سے دولتِ عرفان و آگہی نہ رہی

میں صرف اُن پہ ہی الزام کیسے دوں مشتاقؔؔ
مرے بھی دل میں وہ پہلی سی بے کلی نہ رہی

****************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 265