donateplease
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* شعر گوئی بھی طرح دار سلیقہ مانگے *
شعر گوئی بھی طرح دار سلیقہ مانگے
ہر نیا دور نئی لَے ، نیا لہجہ مانگے

زندگی اپنے تمدن کے سفر میں لوگو
کہنہ تہذیب و روایات کا صدقہ مانگے

جس نے چھینے ہیں غریبوں کے نوالے منہ سے
ایسے دربار سے کیا مانگنے والا مانگے

دل بھلا چیز ہے کیا جان بھی دے سکتے ہیں
شرط اتنی ہے کوئی کہہ کے تو اپنا مانگے

در پہ میں تیرے یہ امید لئے بیٹھا ہوں
بے سہارا دلِ بیتاب سہارا مانگے

کچھ نہ کچھ ہوتی ہے ہر وقت مرے دل کی طلب
غم کی سوغات ، خوشی کا کبھی تحفہ مانگے

اِس سے بڑھ کر کوئی دولت نہیں اِس دنیا میں
مانگنا ہو تو کوئی دیدۂ بینا مانگے

دلِ مشتاقؔ جو محرومِ کرم ہے اب تک
تیرے گلشن سے کوئی پھول خدایا مانگے
***************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 273