donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* تم خواب سہی… *
تم خواب سہی…

دیدار کا موسم ہے
کھوئے ہو کہاں جاناں!
پیڑوں پہ چہکتے ہیں
یادوں کے حسیں پنچھی
ہردھوپ سنہری ہے
پر جوت ابھی کم ہے
میں چاند سے کیوں پوچھوں
کیا رات سہانی ہے
تم خود ہی سمجھ لینا!
شبنم کی سحر نم ہے
تم خواب سہی لیکن
خط میرا حقیقت ہے
تھک ہار کے لوٹا ہے
اور اس کا مجھے غم ہے
دیدار کا موسم ہے
کھوئے ہوئے کہاں جاناں!
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 391