donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* وہ دن کو عیاں ہوگا مگر رات رہے گی *
غزل
			٭……شاہد جمیل

وہ دن کو عیاں ہوگا مگر رات رہے گی
اُس شخص سے پھر کھُل کے ملاقات رہے گی
اِس بار کوئی شہر میں چھپّر نہیں اپنا
اِس بار بڑے زور کی برسات رہے گی
گزرا ہوں گھنی شاخوں سے اس سارے سفر میں
بے برگ درختوں میں مری بات رہے گی
یخ بستہ نظر آئے گا وہ لوٹنے والا
سینے میں مگر گرمیٔ برسات رہے گی
بھٹکاہوں بہت پیاس کے صحرائوں میں شاہدؔ
اب بارشوں کی زد پہ مری ذات رہے گی

*******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 421