rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* پائوں آنگن میں جو رکھتے ہیں تو ڈر ل *
پائوں آنگن میں جو رکھتے ہیں تو ڈر لگتا ہے
سونا سونا سا بنا ماں کے یہ گھر لگتا ہے

قتل گاہیں جو یہ آباد نظر آتی ہیں
تیری خوں ریز سیاست کا اثر لگتا ہے

دشت در دشت پھراتا رہا مجھ کو برسوں
دلِ آوارہ جو بربادِ نظر لگتا ہے

وہی سرخی ، وہی رنگت ، وہی مانوس مہک
کفِ گل بھی تو مرا زخمِ جگر لگتا ہے

آج بھی میری وفا کیش نگاہوں میں تو
زندگی کا کوئی رنگین سفر لگتا ہے

تیری پلکوں پہ چمکتا ہوا ہر قطرۂ اشک
میری پُرشوق نگاہوں میں گہر لگتا ہے

اب نہیں آئے گا مشتاقؔ وہ آنے والا
بجھ گئے تارے چلو وقتِ سحر لگتا ہے
*****************
 
Comments


Login

You are Visitor Number :