rishta online logo
newsletter
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* اے دلِ پُرخوں یہ کیسی بے بسی ہے آج ک&# *
اے دلِ پُرخوں یہ کیسی بے بسی ہے آج کل
ہر کوئی محرومِ حسنِ زندگی ہے آج کل

آدمی رکھتا ہے یوں تو ساری دنیا کی خبر
بے خبر بس آدمی سے آدمی ہے آج کل

بہہ رہا ہے خون انسانوں کا پانی کی طرح
سوچئے تو کتنی ارزاں زندگی ہے آج کل

کیا عجب ہے وہ پیامِ انقلابِ وقت ہو
ساری دنیا میں جو ہلچل سی مچی ہے آج کل

میرے غم کی کیفیت کا کون اندازہ کرے
اک خلش جو میرے سینے میں دبی ہے آج کل

کاروانِ زیست کیوں کر پائے منزل کا نشاں
گمرہی کی دھول ہرسو اڑ رہی ہے آج کل

یوں نگاہیں پھیر لی ہیں اُس بتِ طناز نے
ہر خوشی مشتاقؔ سے روٹھی ہوئی ہے آج کل
*****************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 242