donateplease
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* آدمی پر یہاں دم بدم آدمی *
آدمی پر یہاں دم بدم آدمی
ڈھا رہا ہے ستم پر ستم آدمی

دوسروں کا اٹھائے جو غم آدمی
اب زمانے میں ایسا ہے کم آدمی

ہوگی صبحِ مسرت اُسے کب نصیب
کب سے ہے قیدیٔ شامِ غم آدمی

کون ہمدرد ہے ، کس کو جاکر سنائے
اپنی رودادِ رنج و الم آدمی

آدمی آدمی کا کچلتا ہے سر
آدمی کے ہے زیرِ قدم آدمی

اے خدا آدمی کو یہ کیا ہوگیا
ڈھا رہا ہے جو دیر و حرم آدمی

بیکسوں اور یتیموں کا حق چھین کر
بھر رہا ہے اب اپنا شکم آدمی

دیکھتا ہے جہاں اپنا ذاتی مفاد
سر وہاں اپنا کرتا ہے خم آدمی

آدمیت ہو مشتاقؔ اُس میں اگر
ہے فرشتوں سے وہ محترم آدمی
******************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 259