rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ہمیشہ خون کے چھینٹے پڑے مفلس کے دا *
ہمیشہ خون کے چھینٹے پڑے مفلس کے داماں پر
سدا ظلم و ستم ڈھائے گئے کمزور انساں پر

امیری فرشِ گل پر رات بھر بے چین رہتی ہے
غریبی چین سے سوجاتی ہے خاکِ بیاباں پر

یہ اک سچ ہے یقیں آئے نہ آئے اِس زمانے کو
ہے میرے خون کی سرخی رُخِ گلہائے خنداں پر

کرن پھوٹی ، پرندے چہچہائے ، زندگی جاگی
مگر سوئے رہے تم سبزۂ صحنِ گلستاں پر

کوئی مظلوم کیوں پھیلائے دامن سامنے اِن کے
یہ ظالم جب ترس کھاتے نہیں مظلوم انساں پر

اُسے معلوم کیا جیتے ہیں کیسے لوگ دنیا میں
ہنسا کرتا ہے جو پروردۂ آغوشِ طوفاں پر

جلادے پھر نہ اے مشتاقؔ میرا آشیاں بجلی
بڑی ظالم ہے رہ رہ کر چمکتی ہے گلستاں پر
***************
 
Comments


Login

You are Visitor Number :