rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Mushtaque Darbhangwi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* مہنگا تھا وہ مہنگا ہی ہے *
مہنگا تھا وہ مہنگا ہی ہے
ہیرا آخر ہیرا ہی ہے

لاکھ بھلانا چاہوں اُس کو
یاد مگر وہ آتا ہی ہے

جھوم کے برسا بادل پھر بھی
ساون روکھا سوکھا ہی ہے

ٹوٹتے ہیں ہر رات ستارے
سورج آگ اگلتا ہی ہے

امن کا دور یہ کیسا آیا
خون کا دریا بہتا ہی ہے

گرگٹ کی مانند وہ اکثر
رنگ بدلتا رہتا ہی ہے

گائوں میں اپنا گھر ہے میرا
گرچہ ٹوٹا پھوٹا ہی ہے

الجھن میں مشتاقؔ ہے پھر بھی
شعر ہمیشہ کہتا ہی ہے
**************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 239