donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ایسانہ تھا کہ ہر گھڑی سوچا کروں تج *
غزل

ایسانہ تھا کہ ہر گھڑی سوچا کروں تجھے
اب تو نہیں تو چارسو دیکھا کروں تجھے
تو تو نگارِ قوسِ قزح تھا قدم قدم
یہ کیا ہوا کہ دھند میں ڈھونڈا کروں تجھے
تیری اداسے دیکھ، جنوں میرا کم نہیں
لب پر ہے اور نام پکارا کروں تجھے
شاہین تھا، اڑان تری یوں بھی اور تھی
میں اور ہوں کہ ریت میں ڈھونڈا کروں تجھے
توچاند میرا جھیل کی تہہ میں اترگیا 
میں ساحلوں کی دھند میں ڈھونڈا کروں تجھے
+++
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 399