donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سُنیںنہ اب کوئی قصہ،اُبھرنے والو *
غزل

سُنیںنہ اب کوئی قصہ،اُبھرنے والوںسے
کہ ڈرچکے ہیں بہت یوں بھی،ڈرنے والوںسے
سندملی تھی انہیںسنگ آشنائی کی
وہ ڈرگئے تھے حبابوںپہ مرنے والوں سے
ادائے تلخ کلامی کادرد سب کوتھا
گلہ کسی کو نہ تھاکان بھرنے والوں سے
گزرتے لمحوں کے مقروض بن کے نکلے تھے
حساب لینے لگے تھے ٹھہرنے والوں سے
ہرایک نرم میں شاہد زبان گنگ رہی
بہت قریب تھے ہم بات کرنے والوں سے
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 389