donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سخن کادرد ہے کس انکشاف سے سرشار *
غزل

سخن کادرد ہے کس انکشاف سے سرشار
مراقلم ترے غم کے طواف سے سرشار
پرندلوٹ کے آیانہ شاخ پھرلہکی
؎شجرکے برگ وثمرانحراف سے سرشار
تواک نمود کہ بانٹے سب آندھیوںکوچراغ
میں ایک دیدۂ بیناغلاف سے سرشار
میںایک خواب کہ دونوںکے خواب کی تعبیر
دل ودماغ مرے اختلاف سے سرشار
طرب کی گردستارے لیے کھڑی ہی رہی
الم بہ شیشۂ دل انعطاف سے سرشار
بہاراب مراہرجام دشت کودے دے
چمن درونِ خزاں اعتکاف سے سرشار
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 409