donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* تمام شہر کی نظروںمیں چاند ی سونا ت *
غزل 

تمام شہر کی نظروںمیں چاند ی سونا تھا
مرا وجود مرے واسطے کھلونا تھا
کسی بہانے سے ، یہ سانحہ تو ہونا تھا
مزاج اپنا ملا تھا تو زخم ڈھونا تھا
وفا کے نام  پہ وعدہ تھا، سر پھراہی سہی
یہ انتظار تو ہر ہر قدم پہ ہونا تھا
میں آنے والی بہاروں میں کتنا شامل تھا!
گلِ سرشدت بدست جنوں خشت انداز
غُبار ِ جسم کو کن راستوں میں کھونا تھا
اُداس رہ کے بھی شاہد غم آشنا نہ ہوئے
تمام عمر اِسی بات کا تو رونا تھا
٭٭٭

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 408