donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ہونے کو تو سب ہوتا ہے *
غزل

ہونے کو تو سب ہوتا ہے
ہم جو چاہیں کب ہوتا ہے
اس کو کھو بیٹھے تو جانا
چاہت کا مذہب ہوتا ہے
پہلے لفظوں میں معنی تھے
اب اُن میں مطلب ہوتا ہے
یا تو برسوں کچھ نہیںہوتا
یا پھر روز و شب ہوتا ہے
خط لکھ کر جو دُکھ پہنچائے
کوئی خیر طلب ہوتا ہے
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 383