donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کبھی نہ کھُل کے ملے اُس سے ، ایسی با&# *
غزل
				٭……شاہد جمیل

کبھی نہ کھُل کے ملے اُس سے ، ایسی بات نہ تھی
مگر اب اتنی بھی آسان شرحِ ذات نہ تھی
گِلے جو ہاتھ پکڑتے تو ہم کو کیا غم تھا
ہمارے پائوں میں زنجیر التفات نہ تھی
بچھڑتے دشت کی مٹّی تھی ، پائوں کستی تھی
اُکھڑتے خیموں کی بنیاد بے حیات نہ تھی
تھی کائنات سمندر تو اپنی ذات حباب
پر اپنی ذات میں ڈوبے تو کائنات نہ تھی

وہ خواب اور ہی تھے، پھول بن کے جو مہکے
 ہماری آنکھوں میں خوشبو سی کوئی بات نہ تھی
فنا کے بعد ہمیں ملنے آئی تھی شاہدؔ
وہ ایک نرم لطافت جو بے ثبات نہ تھی
******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 370