donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* تو مرے غم کا خریدار نہیں ہو سکتا *
غزل
				٭……شاہد جمیل

تو مرے غم کا خریدار نہیں ہو سکتا
کوئی ماضی کبھی بازار نہیں ہو سکتا
اُس کی رائے مرے بارے میں غلط  ہے لوگو
شیشہ پتھر کا خطاوار ہو نہیں سکتا
کئی رشتوں کا تقدس ہے مرے اس کے بیچ
حادثہ یہ سرِ بازار نہیں ہو سکتا
یہ بھی ہوتا ہے کہ چہرہ ہی بدل جاتا ہے
آئینہ چہرے سے بیزار نہیںہو سکتا
چلا جائے تو کبھی یاد نہ آئے شاہدؔ
آدمی اتنا وفادار نہیں ہو سکتا
******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 415