donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* تمام شہر کی نظریں جھُکا کے چلتا تھ *
غزل
				٭……شاہد جمیل

تمام شہر کی نظریں جھُکا کے چلتا تھا
میں اپنے آپ سے ملتا تو آنکھیں مَلتا تھا
مری ہتھیلی کو پڑھتا بھی کیسے دست شناس
خطوں کا رنگ شکن در شکن بدلتا تھا
حصارِ رشک سے باہر کبھی نہیں آیا
مرِے خلوص کا قائل تھا، کم ہی جلتا تھا
اب اُس کے حق میں کوئی شام کا سماں بھی نہیں
جو اُگتی دھوپ کے شانہ بشانہ چلتا تھا
اِسے عجب نہ کہو، یہ مِری حقیقت ہے
تباہ میں ہوا اور وقت ہاتھ ملتا تھا
*******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 433