donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Shahid Jameel
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* میں جن کو ڈھونڈ رہا تھا شبِ عتاب کے & *
غزل
 						 ٭……شاہد جمیل

میں جن کو  ڈھونڈ رہا تھا شبِ عتاب کے پاس
کھڑے ہوئے تھے وہ آنکھوں میں میری ، خواب کے پاس 
پتہ بتا کے تمہیں کہہ گیا ہے آنے کو
وہ منتظر ہے بہت دیر سے شباب کے پاس
نگاہِ شوق کو وسعت شناس ہونے دو
تمہیں ببول بھی مل جائیں گے گُلاب کے پاس
مِری شبو ں میں اُترنے سے کچھ گھڑی پہلے
تمہاری یاد ٹھہرتی ہے اضطراب کے پاس
اُمید افزا دھماکہ قریب ہے شاہدؔ
******
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 398