donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Abida Rahmani
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* نہ گھر نہ ٹھکانہ کہاں جا رہی ہوں *

"منتشر جذ بات"

 
نہ گھر نہ ٹھکانہ کہاں جا رہی ہوں
 اپنی دھن میں مست بھاگتی جا رہی ہوں
 
زندگی کی یہ منزلیں دلچسپ و حسیں
کیا لینا ہے ان سے پر ڈھونڈتی جا رہی ہوں
 
یہ اسرار زیست موت کی یہ پہنائیاں
تذبذب میں غرق  جاگتی جا رہی ہوں
 
مرے مالک ترےامتحان یہ مری قسمت
یہ دکھ ہیں میرے اپنے جھیلتی جا رہی ہوں
 
نہ ہے کوئی دوست نہ کوئی غمگسار اپنا 
تلخ و شیریں کو خوش خوش پھانکتی جا رہی ہوں
 
یہ قتل و خوں گرتے ہوئے یہ لاشے
گریہ گریہ مرادیس مگر چاہتی جا رہی ہوں
 
جانے والے بنا کچھ کہے چلے گئے ہیں 
تلاش میں انکی میں کیوں رلتی جا رہی ہوں
 
ترا کرم ، فضل ترا ہی آسرا ہے 
اسی کو میں ہر گھڑی مانگتی جا رہی ہوں
 
عابدہ رحمانی
 
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 490