donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Abida Rahmani
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* میں کیا مانگتا ہوں *

میں کیا مانگتا ہوں

 

راتوں کو اٹھ کر
خیالوں سے ہو کر
یادوں میں کھو کر
تمہیں کیا خبر ہے
اپنے رب سے
میں کیا مانگتا ہوں،

ویرانوں میں جا کر
دکھڑے سنا کر
دامن پھیلا کر
آنسو بہا کر
تمہیں کیا خبر
اپنے رٓب سے
میں کیا مانگتا ہوں،

تم تو کہو گے
صنم مانگتا ہوں
غنم مانگتا ہوں
زر مانگتا ہوں
میں گھر مانگتا ہوں
ذمیں مانگتا ہوں
نگیں مانگتا ہوں،

تم تو کہو گے 
ہم کو خبر ہے 
کہ راتوں کو اٹھ کر
خیالوں سے ہو کر
یادوں میں کھو کر
آنکھیں بگھو کر
کسی دلربا کی
کسی دلنشیں کی
وفا مانگتا ہوں،

یہ بھی غلط ہے
وہ بھی غلط ہے
جو بھی ہے سوچا
سو بھی غلط ہے
نہ صنم مانگتا ہوں
نہ زر مانگتا ہوں
نہ دلربا کی
نہ دلنشیں کی
نہ ماہ جبیں کی
وفا مانگتا ہوں،

تمہیں کیا خبر
اپنے رب س
میں کیا مانگتا ہوں.

میں اپنے رب سے
آدم کے بیٹے کی
آنکھوں سے جاتی،
حیا مانگتا ہوں،
حوا کی بیٹی کے سر سے
اترتی ردا مانگتا ہوں،
اس کڑے وقت میں
ارض وطن کی
بقا مانگتا ہوں.

۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸۸

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 444