donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* زر د موسم میں کوئی سہارا ڈھونڈیں *
غزل
کیف عظیم آبادی

زر د موسم میں کوئی سہارا ڈھونڈیں
پھر کسی زلف سیہ تاب کاسایا ڈھونڈیں
علم و دانش کے اجالے میں پریشاں ہے دماغ
آئو معصوم جہالت کا اندھیرا ڈھونڈیں
اس امنڈتے ہوئے چہروں کے سمندر میں کوئی
جو شناسا لگے آئو وہ چہرہ ڈھونڈیں
خاک کر ڈالے نہ صدیوں کی کہیں پیاس ہمیں
اپنے سوکھے ہوئے ہونٹوں ہی میں دریا ڈھونڈیں
کیفؔ گذری تھی جہاں اپنے لڑکپن کی بہار
آئو آنگن میں اسی پیڑ کا سایا ڈھونڈیں
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 394