donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* شکستِ کلفت حالات ہونے والی ہے *
غزل
کیف عظیم آبادی

 شکستِ کلفت حالات ہونے والی ہے
 اک اجنبی سے ملاقات ہونے والی ہے
 در آئے دل میں مرے پھر مہیب سناٹے
 اداسیوں میں گھری رات ہونے والی ہے
 لبوں پہ کھیل رہی ہے عجیب خاموشی
 دلوں کی تہہ میں کوئی بات ہونے والی ہے
 چلا ہوں میں بھی وجود اپنا گرد گرد لئے
 سنا ہے دشت میں برسات ہونے والی ہے
 لرزر رہا ہوں میں مٹی کے ایک گھر کی طرح
 نمی ہوا میں ہے برسات ہونے والی ہے
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 335