donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* اس نے مزاج دل پوچھا ہے *
غزل
کیف عظیم آبادی

 اس نے مزاج دل پوچھا ہے
 سنگ پہ کیسے پھول اُگا ہے
 دل کو انوکھا روگ لگا ہے
 روتے روتے ہنس دیتا ہوں
 خوف کا یہ بھی کھیل ہے پیارے
 کون ہے بندہ کون خدا ہے
 میں ہو وہی دیوانہ شاعر
 آپ کا جس کو دھیان رہا ہے
 کیفؔ سے مل کر دیکھ چکے ہیں
 پیاسا پیاسا اک دریا ہے
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 329