donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ڈس چکیں جب مرے دل کوخود میری تنہائ *
غزل
کیف عظیم آبادی

ڈس چکیں جب مرے دل کوخود میری تنہائیاں
شہر غم میں بج اٹھی ہیں دور رتک شہنائیاں
پھول، نغمہ، چاند تارے، جام، صہبا، چاندنی
اک تبسم آپ کااور سینکڑوں رعنائیاں
دے دئیے پھولوں کو کتنے نیلے پیلے پیرہن
معجزے سے کم نہیں ہیں خاک کی انگڑائیاں
اس قدر مانوس تنہائی نہ خود کو کیجئے
چین سے رہنے نہ دیں گی یادوں کی پرچھائیاں
پھر جلی باد بہاری پھر ہوئی صبحِ جنوں
پھر وہی کوئے ملامت پھر وہی رسوائیاں
کیفؔ ! کوئی مجھ سے پوچھے کیا ہے بے خوابی کا لطف
چاندنی راتوں کا جادو اور میری تنہائیاں
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 324