donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* عیش و غم زندگی کے پھیرے ہیں *
غزل
کیف عظیم آبادی

 عیش و غم زندگی کے پھیرے ہیں 
 شب کی آغوش میں سویرے ہیں
 میکیدے سے وفا کی منزل تک
 ہم فقیروں کے ہیرے پھیرے ہیں
 مجھ کو مت دیکھ یوں حقارت سے 
 میں نے رخ زندگی کے پھیرے ہیں
 ان کی زلفوں کی نرم چھائوں میں
 زندگی کے حسیں سویرے ہیں
 میں ہوں معمار زندگی اے کیفؔ
 دونوں عالم کے حسن میرے ہیں
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 341