donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaif Azimabadi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* پھول ہنسے اور شبنم روئی آئی صبا مس *
غزل
کیف عظیم آبادی

 پھول ہنسے اور شبنم روئی آئی صبا مسکائی دھوپ
 یاد کا سورج ذہن میں چمکا پلکوں پہ لہرائی دھوپ
 گائوں کی دھرتی بانجھ ہوئی ہے پنگھٹ سونا سونا ہے
 پیپل کے پتوں میں چھپ کر ڈھونڈتی ہے تنہائی دھوپ
 کوئی کرن بھی کام نہ آئی جیون کے اندھیارے میں
 میرے گھر کے باہر لیکن لیتی رہی انگرائی دھوپ
 ہم تو سدھ بدھ کھوئے بیٹھے تھے ہستی کے ویرانے میں
 جانے کب زلفیں لہرائیں جانے کب سنولائی دھوپ
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 378