donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kaleem Usmani
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* جب سرِ شام کوئی یاد مچل جاتی ہے *
غزل

جب سرِ شام کوئی یاد مچل جاتی ہے
دِل کے ویرانے میں اک شمع سی جل جاتی ہے
جب بھی آتاہے کبھی ترک تمنا کاخیال
لے کے اک موج کہیں دورنکل جاتی ہے
یہ ہے مے خانہ یہاں وقت کا احساس نہ کر
گردش وقت یہاں جام میں ڈھل جاتی ہے
خواہش زیست غم ِمرگ غمِ سود وزیاں
زندگی چند کھلونوں سے بہل جاتی ہے
جب وہ ہنستے ہوئے آتے ہیں خیالوں میں کلیم
شام غمِ صبحِ مسرت میں بدل جاتی ہے
+++
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 758