donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kalim Aazar
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* وہ آسماں پہ زمیں کا سراغ چاہتی ہے *
غزل

وہ آسماں پہ زمیں کا سراغ چاہتی ہے
مری تلاش خلائوں میں باغ چاہتی ہے
بچائو پھول سے دامن ہوس کے ہاتھوں سے
کہ روئے ناز کو وہ داغ داغ چاہتی ہے
یہ کس مقام پہ لے آئی زندگی مجھ کو
کہ میری زیست بھی مجھ سے فراغ چاہتی ہے
اک ایسی ہستی بھی ابھری ہے رہنما بن کر
جو ملک و قوم کے ماتھے پہ داغ چاہتی ہے
شبِ سیاہ کے صحرا میں تھے جو خیمہ زن
’’اب اُن کی تیرہ نصیبی چراغ چاہتی ہے‘‘
یہاں بھی قوتِ بازو دکھا رہے ہو تم
میاں قلم کی لڑائی دماغ چاہتی ہے
مطالعہ ہے ضروری بہت کلیم آذر
کہ شعر گوئی بھی اعلیٰ دماغ چاہتی ہے

کلیم آذر

2/B/H/26, Dr. M.N.Chatterji Road
Kolkata-700009
Mob: 9330173352
بشکریہ ’’میر بھی ہم بھی‘‘	مرتب: مشتاق دربھنگوی
………………………
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 356