donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kamal Jafri
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* جانے کس طرح یہ دہشت پھیلی *
(کمال جعفری( دہلی)
جانے کس طرح یہ دہشت پھیلی
صبح تا شام ہے قیامت سی
جانے کس کوکھ میں پلی و بڑھی
اور سر اپنا یہ اٹھانے لگی
قتل و غارت گری مچانے لگی
ہر طرف جوئے خوں بہانے لگی
موت اپنے گلے لگانے لگی
اس کا مذہب نہ ذات پات کوئی
اس کو حاصل کہاں ثبات کوئی
یہ تو کچھ سر پھروںکی سازش ہے
بزدلی کی فقط نمائش ہے
خود کشی اور بم دھماکوں سے 
حل کبھی مسئلے نہیں ہوتے
ابنِ آدم اگر ہوا اے لوگو!
امن کا ہر اصول اپنا ئو
 دل سے اپنا کے خیر کا جذبہ
کارِ شیطان سے کرو توبہ
کیوں کوئی مائلِ عداوت ہو

یعنی دہشت سے سب کو نفرت ہو
٭٭٭
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 398