donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kausar Niyazi
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کبھی جو نکہتِ زلفِ نگار آئی ہے *
کبھی جو نکہتِ زلفِ نگار آئی ہے
فضائے مردئہ دل میں بہار آئی ہے

ضرور تیری گلی سے گزر ہوا ہو گا
کہ آج بادِ صبا بے قرار آئی ہے

کوئی دماغ تصور بھی جن کا کر نہ سکے
یہ جانِ زار وہ لمحے گزار آئی ہے

خدا گواہ کہ ان کے فراق میں کوثر
جو سانس آئی ہے وہ سوگوار آئی ہے
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 366