donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Kawish Kamal
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کیوں بنا برق ، شعلہ ، شرر آدمی *
غزل

کیوں بنا برق ، شعلہ ، شرر آدمی
غور اس پر کرے آج ہر آدمی
کل کا سورج پیامِ خوشی لائے گا
جی رہا ہے اس امید پر آدمی
جیتے جی الجھنوں سے رہائی کہاں
چاہتا تو ہے ان سے مفر آدمی
یہ مرض یوں ہی لاحق تو ہوتا نہیں
مول لیتا ہے خود دردِ سر آدمی
زر پہ ، ایواں پہ ، ہستی پہ ہے ناز کیوں
جب ہے مثلِ چراغِ سحر آدمی
ملک بیمار ہے ، قوم بیمار ہے
کہہ دو! ڈھونڈے کوئی چارہ گر آدمی
گرد میرے سبھی با ہنر لوگ ہیں
میں ہی کاوش ہوں اک بے ہنر آدمی

کاوش کمال

Cowes Ghat Road, Shibpur
Howrah-711102
Mob: 9883578273
بشکریہ ’’میر بھی ہم بھی‘‘	مرتب: مشتاق دربھنگوی
………………………
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 390