donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Khalid Masood Khan
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ساڈے جو ارادے تھے *
ساڈے جو ارادے تھے
کِڈے سدھے سادے تھے
ہم نے سوچ رکھا تھا
بن کے ایک دن ممبر
اکو کام کرنا ہے
ایک دو پلازوں کو
چار چھ پلاٹوں کو
پنچی تیہہ مربعوں کو
اپنے نام کرنا ہے
شکر اے خداوندا
تو نے اِس نمانے کی
نکی جنی خواہش کو
سن لیا ہے نیڑے سے
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 355