donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Krishan Mohan
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* کیا یہ بھی زندگی ہے کہ راحت کبھی نہ *

کیا یہ بھی زندگی ہے کہ راحت کبھی نہ ہو
ایسی بھی تو کسی سے محبت کبھی نہ ہو

وعدہ ضرور کرتے ہیں آتے نہیں کبھی
پھر یہ بھی چاہتے ہیں شکایت کبھی نہ ہو

شامِ وصال بھی، یہ تغافل، یہ بے رُخی
تیری رضا ہے مجھ کو مسرّت کبھی نہ ہو

احباب نے دیئے ہیں مجھے کس طرح فریب
مجھ سا بھی کوئی سادہ طبیعت کبھی نہ ہو

لب تو یہ کہہ رہے ہیں کہ اٹھ بڑھ کے چوم لے
آنکھوں کا یہ اشارہ کہ جرات کبھی نہ ہو

دل چاہتا ہے پھر وہی فرصت کے رات دن
مجھ کو تیرے خیال سے فرصت کبھی نہ ہو

 
Comments


Login

You are Visitor Number : 329