donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* دکھوں کے رہنے سے یاد_ خدا بھی رہتی ہ&# *
غزل

از ڈاکٹر جاوید جمیل

 
 
دکھوں کے رہنے سے یاد_ خدا بھی رہتی ہے
جبیں زمیں پہ لبوں پر دعا بھی رہتی ہے
 
وہ بات کرتا ہے تو بات ہی نہیں کرتا
ہر ایک بات میں شامل ادا بھی رہتی ہے
 
ستاتے رہتے ہیں زلفوں کے پیچ و خم اسکو
ہے جن پہ ناز، انہیں سے خفا بھی رہتی ہے
 
وہ چاہتے تو ہیں جی بھر کے دیکھنا مجھ کو
مگر نگاہوں پہ غالب حیا بھی رہتی ہے
 
علاج کرتے ہیں ہر ممکنہ طریقے سے
ہمارے پاس دعا بھی، دوا بھی رہتی ہے
 
چمن ہوں، تند ہوائیں مجھے ستاتی ہیں
مگر تلاش میں میری صبا بھی رہتی ہے
 
ہمیشہ پانو رہے فرش پر مرے جاوید
ہےشوق_ زیست تو فکر_ قضا بھی رہتی ہے
****
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 462