donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* سر_ عام زندگی کو ترے نام کر دیا ہے *
غزل

از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
 
سر_ عام زندگی کو ترے نام کر دیا ہے
سر_ دست ہر گھڑی کو ترے نام کر دیا ہے 
 
تری یاد سے نکلتے تو کچھ اور یاد آتا
دل و جاں کی بیخودی کو ترے نام کر دیا ہے 
 
 مرا حلیہ بولتا ہے، مری آنکھیں بولتی ہیں
کہ لبوں کی خامشی کو ترے نام کر دیا ہے
 
مرے سینے کی یہ دھک دھک، مری آنکھوں کی یہ رم جھم
شب_ غم کی راگنی کو ترے نام کر دیا ہے
 
شب_ انتظار مجھ پر ہے ابھی تمام باقی
سر_  شام بے کلی کو ترے نام کر دیا ہے
 
مرے فلسفوں پہ غالب غم_ دنیوی رہے گا
مگر اپنی شاعری کو ترے نام کر دیا ہے
 
میں یہ مانتا ہوں یارب مری بندگی تھی ناقص
مگر آج سے خودی کو ترے نام کر دیا ہے  
 
تری جلوتوں کے صدقے ہوا ذرہ ذرہ روشن
شب_ وجد آگہی کو ترے نام کر دیا ہے
 
میں ہوں قدر، دے دیا ہے جو ترا تھا تجھ کو جاوید
کہ زماں کی بے رخی کو ترے نام کر دیا ہے
*****
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 474