donateplease
newsletter
newsletter
rishta online logo
rosemine
Bazme Adab
Google   Site  
Bookmark and Share 
design_poetry
Share on Facebook
 
Dr Javed Jamil
 
Share to Aalmi Urdu Ghar
* ہمدرد مرا یوں تو بظاہر ہے بڑا وہ *
غزل
از ڈاکٹر جاوید جمیل
 
 
ہمدرد مرا یوں تو بظاہر ہے بڑا وہ
رستہ نہیں دیتا ہے کہ شاطر ہے بڑا وہ
 
انگ انگ مرا اسکا پرستار ہوا ہے
محکوم بنا ڈالا ہے، ساحر ہے بڑا وہ
 
برجستہ ہراک بات پہ دل کہتا ہے واہ واہ
سامع ہوں میں گویا، کوئی شاعر ہے بڑا وہ
 
ایک بت ہے کراتا ہے مگر مجھ سے پرستش
کافر ہوں، مگر مجھ سے بھی کافر ہے بڑا وہ
   
مارا ہوا حالات کا ہے، پھر بھی ہے خوش خوش
الله کا کرم اس پہ ہے، صابر ہے بڑا وہ
 
طاغوت فقط  نقشہ گر_ حال نہیں ہے
تاریخ نویسی میں بھی ماہر ہے بڑا وہ
 
چلتا ہی چلا جاتا ہے رکتا نہیں جاوید
پروا نہیں منزل کی، مسافر ہے بڑا وہ
******************
 
Comments


Login

You are Visitor Number : 461